۱۳۹۶/۳/۸   2:38  ویزیٹ:811     معصومین(ع) ارشیو


زیارت نامه حضرت فاطمه زهرا سلام الله علیها

 


 

       زیارت نامه حضرت فاطمه زهرا سلام الله علیها

یَا مُمْتَحَنَۃُ امْتَحَنَکِ اﷲُ الَّذِی خَلَقَکِ قَبْلَ ٲَنْ یَخْلُقَکِ فَوَجَدَکِ لِمَا امْتَحَنَکِ صابِرَۃً

اے آزمائش شدہ بی بی آپ کا اس اﷲ نے امتحان لیا جس نے آپ کو پیدا کیا اس نے آپ کی خلقت سے پہلے ہی آپ کوصابرہ پایا

وَزَعَمْنا ٲَنَّا لَکِ ٲَوْلِیائٌ وَمُصَدِّقُونَ وَصابِرُونَ لِکُلِّ مَا ٲَتَانَا بِہِ ٲَ بُوکِ صَلَّی اﷲُ

اور ہم سمجھتے ہیں کہ ہم آپ کے محب ماننے والے اور معتقد ہیںہر اس تعلیم میں جو آپ کے والد بزرگواراور ان کے وصی سے ہمیں ملی ہے

عَلَیْہِ وَآلِہِ، وَٲَتی بِہِ وَصِیُّہُ، فَ إنّا نَسْٲَلُکِ إنْ کُنَّا صَدَّقْناکِ إلاَّ ٲَلْحَقْتِنَا بِتَصْدِیقِنَا

خدا کی رحمت ہو ان پر اور انکی آل(ع) پر پس ہم درخواست کرتے ہیں کہ اگر ہم آپ کے مخلص ہیں تو ہمارے اسی اعتقاد کے ساتھ ہمیں

لَھُما لِنُبَشِّرَ ٲَنْفُسَنا بِٲَنَّا قَدْ طَھُرْنا بِوِلایَتِکِ نیز مستحب ہے یہ پڑھے: اَلسَّلَامُ عَلَیْکِ یَا

ان دونوں تک پہنچائیں تاکہ اپنے نفس کو بشارت دیں کہ آپکی ولایت ومحبت کے ذریعے پاک ہوگئے ہیں آپ پر سلام ہو اے

بِنْتَ رَسُولِ اﷲِ اَلسَّلَامُ عَلَیْکِ یَا بِنْتَ نَبِیِّ اﷲِ، اَلسَّلَامُ عَلَیْکِ یَا بِنْتَ حَبِیبِ اﷲِ

رسول(ص) خدا کی دختر آپ پر سلام ہو اے اﷲ کے نبی(ص) کی بیٹی آپ پر سلام ہو اے اﷲ کے حبیب کی دختر

اَلسَّلَامُ عَلَیْکِ یَا بِنْتَ خَلِیلِ اﷲِ، اَلسَّلَامُ عَلَیْکِ یَا بِنْتَ صَفِیِّ اﷲِ، اَلسَّلَامُ عَلَیْکِ

آپ پر سلام ہو اے خدا کے خلیل کی دختر آپ پر سلام ہو اے خدا کے برگزیدہ کی دختر آپ پر سلام ہو

یَا بِنْتَ ٲَمِینِ اﷲِ اَلسَّلَامُ عَلَیْکِ یَا بِنْتَ خَیْرِ خَلْقِ اﷲِ اَلسَّلَامُ عَلَیْکِ یَا بِنْتَ ٲَفْضَل

اے امین اﷲ کی دختر آپ پر سلام ہو اے مخلوق خدا میں سے بہترین کی دخترآپ پر سلام ہو اے نبیوں رسولوں اور

ٲَنْبِیائِ اﷲِ وَرُسُلِہِ وَمَلائِکَتِہِ، اَلسَّلَامُ عَلَیْکِ یَا بِنْتَ خَیْرِ الْبَرِیَّۃِ، اَلسَّلَامُ عَلَیْکِ یَا

فرشتوں سے برتر ہستی کی دختر آپ پر سلام ہو اے بہترین مخلوق کی دختر آپ پر سلام ہو اے

سَیِّدَۃَ نِسائِ الْعالَمِینَ مِنَ الْاََوَّلِینَ وَالْاَخِرِینَ، اَلسَّلَامُ عَلَیْکِ یَا زَوْجَۃَ وَ لِیِّ اﷲِ

جہان میں ﴿اولین وآخرین﴾ سبھی عورتوں کی سیدہ و سردار آپ پر سلام ہو اے خدا کے ولی کی زوجہ

وَخَیْرِ الْخَلْقِ بَعْدَ رَسُولِ اﷲِ، اَلسَّلَامُ عَلَیْکِ یَا ٲُمَّ الْحَسَنِ وَالْحُسَیْنِ سَیِّدَیْ

جو رسول(ص) کے بعد ساری مخلوق میںبہترین ہیں آپ پر سلام ہو اے حسن(ع) و حسین(ع) کی والدہ جو جنت کے جوانوں

شَبابِ ٲَھْلِ الْجَنَّۃِ، اَلسَّلَامُ عَلَیْکِ ٲَیَّتُھَا الصِّدِّیقَۃُ الشَّھِیدَۃُ، اَلسَّلَامُ عَلَیْکِ ٲَیَّتُھَا

کے سردار ہیں آپ پر سلام ہو کہ آپ صدیقہ و شہیدہ ہیں آپ پر سلام ہو کہ آپ خدا سے

الرَّضِیَّۃُ الْمَرْضِیَّۃُ، اَلسَّلَامُ عَلَیْکِ ٲَیَّتُھَا الْفاضِلَۃُ الزَّکِیَّۃُ، اَلسَّلَامُ عَلَیْکِ ٲَیَّتُھَا

راضی اور خدا آپ سے راضی ہے آپ پر سلام ہو کہ آپ فضیلت والی اور پاکیزہ ہیں آپ پر سلام ہو کہ آپ

الْحَوْرائُ الْاِنْسِیَّۃُ، اَلسَّلَامُ عَلَیْکِ ٲَیَّتُھَا التَّقِیَّۃُ النَّقِیَّۃُ، اَلسَّلَامُ عَلَیْکِ ٲَیَّتُھَا الْمُحَدَّثَۃُ

نوع انسانی میں حور صفت ہیں آپ پر سلام ہو اے پرہیزگار پاکباز آپ پر سلام ہو اے وحی کی رازداں

الْعَلِیمَۃُ اَلسَّلَامُ عَلَیْکِ ٲَیَّتُھَا الْمَظْلُومَۃُ الْمَغْصُوبَۃُ اَلسَّلَامُ عَلَیْکِ ٲَیَّتُھَا الْمُضْطَھَدَۃُ

علم و دانش والی آپ پر سلام ہو اے بی بی جس پرظلم ہوا جس کا حق چھینا گیا آپ پر سلام ہو اے ستم کشیدہ۔ اورحاکموں کا

الْمَقْھُورَۃُ، اَلسَّلَامُ عَلَیْکِ یا فاطِمَۃُ بِنْتَ رَسُولِ اﷲِ وَرَحْمَۃُ اﷲِ وَبَرَکاتُہُ، صَلَّی

قہر دیکھنے والی آپ پر سلام ہو اے اﷲ کے رسول کی دختر فاطمہ زہرا(ع) آپ پر اﷲ کی رحمت وبرکات ہوں آپ پر اور

اﷲُ عَلَیْکِ وَعَلَی رُوحِکِ وَبَدَنِکِ ٲَشْھَدُ ٲَنَّکِ مَضَیْتِ عَلَی بَیِّنَۃٍ مِنْ رَبِّکِ وَٲَنَّ مَنْ

آپکی روح اور آپ کے جسم پر خدا رحمت فرمائے میں گواہی دیتا ہوں کہ آپ نے خدا کی طرف سے روشن دلیل پر زندگی گزری ہے

سَرَّکِ فَقَدْ سَرَّ رَسُولَ اﷲِ صَلَّی اﷲُ عَلَیْہِ وَآلِہِ، وَمَنْ جَفَاکِ فَقَدْ جَفَا رَسُولَ

بیشک جس نے آپ کو خوش کیا اس نے رسول(ص) کو خوش کیا، خداان پر اور انکی آل (ع)پر رحمت کرے اور جس نے آپ پرظلم کیا اس نے

اﷲِ صَلَّی اﷲُ عَلَیْہِ وَآلِہِ، وَمَنْ آذاکِ فَقَدْ آذی رَسُولَ اﷲِ صَلَّی

رسول اﷲ(ص) پرظلم کیا اور خدا رحمت کرے ان پر اور انکی آل(ع) پر، اور جس نے آپ کواذیت دی اس نے رسول اﷲ(ص) کو اذیت دی ،

اﷲُ عَلَیْہِ وَآلِہِ، وَمَنْ وَصَلَکِ فَقَدْ وَصَلَ رَسُولَ اﷲِ صَلَّی اﷲُ عَلَیْہِ وَآلِہِ وَمَنْ

خدا کی رحمت ہو ان پر اور ان کی آل پر جو آپ کے ساتھ ہوا وہ رسول اﷲ(ص) کے ساتھ ہواخدا کی رحمت ہو ان پر اور ان کی آل(ع) پر، اور جو

قَطَعَکِ فَقَدْ قَطَعَ رَسُولَ اﷲِ صَلَّی اﷲُ عَلَیْہِ وَآلِہِ لاََِنَّکِ بِضْعَۃٌ مِنْہُ وَرُوحُہُ الَّذِی

آپ سے جدا ہوا وہ رسول اﷲ (ص) سے جدا ہوا ، خدا کی رحمت ہو ان پر اور ان کی آل(ع) پر اس لیے کہ آپ ان کی گوشئہ جگر اور ان کی روح

بَیْنَ جَنْبَیْہِ، ٲُشْھِدُ اﷲَ وَرُسُلَہُ وَمَلائِکَتَہُ ٲَنِّی راضٍ عَمَّنْ رَضِیتِ عَنْہُ

ہیں جو انکے بدن میں ہے میں اﷲاسکے رسولوں اور فرشتوں کو گواہ بناتا ہوںکہ میں خوش ہوں اس سے جس سے آپ خوش ہیں اور

ساخِطٌ عَلَی مَنْ سَخِطْتِ عَلَیْہِ، مَتَبَرِّیٌَ مِمَّنْ تَبَرَّٲْتِ مِنْہُ، مُوَالٍ لِمَنْ وَالَیْتِ، مُعادٍ

خفاہوں اس سے جس سے آپ خفا ہیں دور ہوں اس سے جس سے آپ دور ہیں ساتھی ہوں اسکا آپ جس کیساتھ ہیں دشمن ہوں

لِمَنْ عادَیْتِ ، مُبْغِضٌ لِمَنْ ٲَبْغَضْتِ، مُحِبٌّ لِمَنْ ٲَحْبَبْتِ، وَکَفَی بِاﷲِ شَھِیداً

اسکا جو آپکا دشمن ہے نفرت کرتا ہوں اس سے جس سے آپ کو نفرت ہے چاہتا ہوں اسے جس کو آپ چاہتی ہیں اور اﷲ گواہی میں،

وَحَسِیباً وَجازِیاً وَمُثِیباً ۔

حساب، سزا اور جزا دینے میں کافی ہے۔اس کے بعد حضرت رسول(ص) اور ائمہ مصومین (ع)پر صلوات بھیجے۔مؤلف کہتے ہیں کہ ہم نے حضرت فاطمہ زہرا = کی ایک تیسری زیارت بھی 3 جمادی الثانی کے اعمال میں نقل کی ہے ﴿باب دوم کی دسویں فصل میں رجوع کریں﴾ نیز علمائ اعلام نے ان صدیقہ ﴿س﴾کی ایک اور طویل زیارت بھی تحریر فرمائی ہے جو لفظ بہ لفظ وہی زیارت ہے جو ہم نے

شیخ سے ابھی نقل ہے۔ جو اَلسَّلاَمُ عَلِیْکِ یَا بِنْتَ رَسُولِ اﷲِ سے شروع ہوتی ہے۔اُشْھِدُ اﷲَ

آپ پر سلام ہواے خدا کے رسول کی دختر گواہ بناتا ہوں اﷲ کو

وَرُسُلَہُ وَمَلاَئِکَتَہُ ﴿اس کے رسولوں اور فرشتوں﴾ پر تمام ہوتی ہے اور اس کے بعد یوں ہے۔

ٲُشْھِدُ اﷲَ وَمَلائِکَتَہُ ٲَنِّی وَ لِیٌّ لِمَنْ وَالاکِ، وَعَدُوٌّ لِمَنْ عَادَاکِ، وَحَرْبٌ

گواہ بناتا ہوں اﷲ کو اور اس کے فرشتوں کو اس پر کہ میں یقینا آپ کے دوستوں کا دوست آپ کے دشمنوںکا دشمن ہوںاور میری اس

لِمَنْ حَارَبَکِ، ٲَنَا یَا مَوْلاتِی بِکِ وَبِٲَبِیکِ وَبَعْلِکِ وَالْاََئِمَّۃِ مِنْ وُلْدِکِ مُوقِنٌ،

سے جنگ ہے جس سے آپ کی جنگ ہے اے میری مالکہ میں آپ کا آپ کے بابا جان کا آپ کے شوہر کا اور آپ کی اولاد میں

وَبِوِلایَتِھِمْ مُؤْمِنٌ، وَ لِطَاعَتِھِمْ مُلْتَزِمٌ، ٲَشْھَدُ ٲَنَّ الدِّینَ دِینُھُمْ، وَالْحُکْمَ

سے ائمہ (ع)کا معتقد ہوں انکی ولایت پر ایمان اور ان کی فرمانبرداری کو لازم سمجھتا ہوں گواہی دیتا ہوں کہ دین صرف ان کا دین ہے اور

حُکْمُھُمْ، وَھُمْ قَدْ بَلَّغُوا عَنِ اﷲِ عَزَّ وَجَلَّ، وَدَعَوْا إلَی سَبِیلِ اﷲِ

حکم فقط ان کا حکم ہے انہوں نے عزت و جلالت والے خدا کی طرف سے پیغام دیا اور انہوں نے دانائی اور اچھی نصیحت کے ذریعے

بِالْحِکْمَۃِ وَالْمَوْعِظَۃِ الْحَسَنَۃِ، لاَ تَٲْخُذُھُمْ فِی اﷲِ لَوْمَۃُ لائِمٍ، وَصَلَواتُ اﷲِ

خدا کے راستے کیطرف بلایا کہ خدا کے بارے انہیں کسی ملامت کرنے والے کی ملامت کی پروا نہیں اور آپ پر خدا کی رحمت ہو آپ

عَلَیْکِ وَعَلَی ٲَبِیکِ وَبَعْلِکِ وَذُرِّیَّتِکِ الْاََئِمَّۃِ الطَّاھِرِینَ اَللّٰھُمَّ صَلِّ عَلَی مُحَمَّدٍ وَٲَھْلِ

کے بابا جان پر آپ کے شوہر پر اور آپ کی اولاد میں سے پاکباز ائمہ(ع) پر اے معبود! حضرت محمد(ص) پر اور ان کے اہل

بَیْتِہِ وَصَلِّ عَلَی الْبَتُولِ الطَّاھِرَۃِ الصِّدِّیقَۃِ الْمَعْصُومَۃِ التَّقِیَّۃِ النَّقِیَّۃِ الرَّضِیَّۃِ الْمَرْضِیَّۃِ

بی(ع)ت پر رحمت فرما اور بی بی بتول﴿س﴾ پر رحمت فرما جو پاکیزہ بہت سچی گناہ سے دور پرہیزگار پاکباز راضی شدہ پسندیدہ

الزَّکِیَّۃِ الرَّشِیدَۃِ الْمَظْلُومَۃِ الْمَقْھُورَۃِ الْمَغْصُوبَۃِ حَقُّھا الْمَمْنُوعَۃِ إرْثُھا الْمَکْسُورَۃِ

پاک باطن ہدایت یافتہ مظلومہ قہر زدہ اپنے حق سے محروم اور اپنی وراثت سے محروم پہلو پر چوٹ کھائے ہوئے ہیں

ضِلْعُھَا، الْمَظْلُومِ بَعْلُھَا، الْمَقْتُولِ وَلَدُھا، فاطِمَۃَ بِنْتِ رَسُو لِکَ، وَبَضْعَۃِ لَحْمِہِ

جس کا شوہر مظلوم جس کا بیٹا مقتول ہے وہ تیرے رسول(ص) کی دختر فاطمہ(ع) ہے جو ان کے جسم کا ٹکڑا

وَصَمِیمِ قَلْبِہِ وَفِلْذَۃِ کَبِدِہِ وَالنُّخْبَۃِ مِنْکَ لَہُ وَالتُّحْفَۃِ خَصَصْتَ بِھا وَصِیَّہُ وَحَبِیبَۃِ

ان کے دل کا چین ان کے جگر کا گوشہ تیرے نبی(ص) کے لیے منتخب اور تیرا وہ تحفہ جوتو نے ان کے وصی کو نوازا وہ محمد(ص) مصطفےٰ کی

الْمُصْطَفی وَقَرِینَۃِ الْمُرْتَضی وَسَیِّدَۃِ النِّسائِ وَمُبَشِّرَۃِ الْاََوْ لِیائِ حَلِیفَۃِ الْوَرَعِ وَالزُّھْدِ

لاڈلی اور علی(ع) مرتضی کی شریک حیات ہے عورتوں کی سردار ائمہ(ع) کی بشارت دینے والی تقویٰ و پرہیز گاری کی مالکہ

وَتُفَّاحَۃِ الْفِرْدَوْسِ وَالْخُلْدِ الَّتِی شَرَّفْتَ مَوْ لِدَھا بِنِسائِ الْجَنَّۃِ وَسَلَلْتَ مِنْھا ٲَنْوارَ

اور وہ بہشت جادواں کا سیب ہے کہ جس کی ولادت سے تو نے جنت کی عورتوں کو عزت دی اور انوار ائمہ طاہرین(ع) کو ان کی ذریت

الْاََئِمَّۃِ، وَٲَرْخَیْتَ دُونَھا حِجابَ النُّبُوَّۃِ ۔ اَللّٰھُمَّ صَلِّ عَلَیْھا صَلاۃً تَزِیدُ فِی مَحَلِّھا

میں قرار دیا اور انکے سامنے نبوت کے حجاب کو ڈال دیا اے معبود! اس بی بی﴿س﴾ پر رحمت فرما کہ جو تیرے حضور اس کے مرتبہ کو

عِنْدَکَ، وَشَرَفِھا لَدَیْکَ، وَمَنْزِلَتِھا مِنْ رِضَاکَ، وَبَلِّغْھا مِنَّا تَحِیَّۃً وَسَلاماً، وَآتِنَا مِنْ

بڑھائے اس کے شرف کو زیادہ کرے اور تیری رضا میں اس کی شان بلند کرے اس بی بی﴿س﴾ کو ہمارا درود و سلام پہنچا اور اس کی

لَدُنْکَ فِی حُبِّھا فَضْلاً وَ إحْسَاناً وَرَحْمَۃً وَغُفْراناً إنَّکَ ذُو الْعَفْوِ الْکَرِیمِ ۔

محبت کے طفیل ہمیں اپنی طرف سے فضل احسان رحمت اور بخشش عطا فرما کہ بے شک تو معاف کرنے والا مہربان ہے۔

شیخ نے تہذیب میں فرمایا ہے کہ حضرت فاطمہ زہرا = کی زیارت کی بہت زیادہ فضیلت ذکر ہوئی ہے‘ مصباح الانوار میں علامہ مجلسی(رح) نے نقل کیا ہے کہ حضرت فاطمہ زہرا = سے روایت ہوئی ہے کہ مجھ سے میرے والد گرامی نے فرمایا کہ جو شخص تجھ پر صلوات بھیجے تو اﷲ تعالیٰ اسے بخش دے گا۔ نیز بہشت میں وہ اس مقام پر میرے ساتھ ہوگا جہاں میں مقیم ہوں گا